Wednesday, March 20, 2013

پکاسو کی محبوبہ کی تصویر 28 ملین میں نیلام

معروف مصور پکاسو کی اپنی محبوبہ میری تھیریس والٹر کی پینٹنگ لندن کے معروف نیلامی گھر سودبی میں دو کروڑ چھیاسی لاکھ برطانوی پاؤنڈ میں فروخت ہوئی ہے۔
مصور پکاسو نے اس پینٹنگ کو سنہ 1932 میں تخلیق کیا تھا اور اس کا نام ’کھڑکی کے پاس بیٹھی خاتون‘ رکھا تھا۔
منگل کی رات کو ہونے والی نیلامی میں یہ پینٹنگ خاص طور پر توجہ کا مرکز تھی جس پر سودنی کی ہیلینا نیومین نے خوشی کا اظہار کیا۔
’یہ فنکار کا جدید دکھنے والا پر کشش فن پارہ ہے۔ ہم خوش ہیں کہ اتنا حیرت انگیز اور زبردست پورٹریٹ اتنی بڑی قیمت میں نیلام ہوا ہے۔‘
ان کا کہنا تھا ’خاص طور پر حالیہ برسوں میں ہم نے لوگوں کو پکاسو کے میری تھیریس کے پورٹریٹ کے طرف مائل ہوتے دیکھا ہے۔‘
پکاسو اپنی محبوبہ کو ’گولڈن میوز‘ (فنونِ لطیفہ کی سنہری دیوی) کا نام دیا تھا۔ وہ سنہ 1923 سے 1927 تک ان کے ساتھ رہی تھیں۔
"حالیہ برسوں میں ہم نےخاص طور پر لوگوں کو پکاسو کے میری ٹیریس کے پورٹریٹ کے طرف مائل ہوتے دیکھا ہے"
نیلامی گھر کی نگران
ان دونوں کے درمیان تعلقات اس وقت شروع ہوئے تھے جب پکاسو پینتالیس اور میری سترہ برس کی تھیں۔
ان دونوں سے مایا پکاسو کے نام سے ایک بیٹی بھی تھی لیکن جب پکاسو کو ڈورا مار کے نام سے دوسری محبوبہ ملی تو دونوں جدا ہوگئے تھے۔
اس نیلامی میں اور بھی کئی مہنگی پینٹنگز کی نیلامی ہوئی اور مجوعی طور پر دس کروڑ اکیس لاکھ برطانوی پاؤنڈ میں پینٹنگز نیلام ہوئیں۔
آ‎سٹریا کے مصور کا بھی ایک فن پارہ توجہ کا مرکز تھا جو ایک کروڑ 40 لاکھ پاؤنڈ میں فروخت ہوا۔
ان کی سنہ 1941 کی ایک پنٹنگ ’محبوب کا وادی میں اپنی پورٹریٹ‘ تقریباً 80 لاکھ پونڈ میں فروخت ہوئی۔
اس کے علاوہ بھی کئی معروف فن پاروں کو شائقین نے لاکھوں پاؤنڈ میں خریدا گیا۔

اسی بارے میں

No comments: